مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی مجلس شوریٰ کا اجلاس اختتام پذیر

ملک و ملت و جماعت سے متعلق اہم فیصلے اور داعش اور ظواہری کی مذمت
نئی دہلی۔۷ستمبر۴۱۰۲ ،مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی پریس ریلیز کے مطابق آج اہل حدیث کمپلیکس،اوکھلا،نئی دہلی میں مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کی مجلس شوریٰ کا ایک اہم اجلاس زیرصدارت امیرجمعیت محترم حافظ محمدیحيٰ دہلوی حفظہ اللہ منعقد ہوا جس میں ملک کے طول وعرض سے بھاری تعدادمیں آئے اراکین ومدعووین خصوصی نے شرکت کی۔ناظم عمومی مولانا اصغر علی امام مہدی سلفی اورناظم مالیات جناب الحاج وکیل پرویز صاحب نے اپنی اپنی رپورٹیں پیش کیںجن پر مجلس نے اطمینان و خوشی کا اظہارکیا۔ میٹنگ میںجمعیت کے کاموں کا جائزہ لیا گیااورمالی استحکام پر غور کیا گیا، آئندہ کے دعوتی،تعلیمی، تنظیمی اوررفاہی منصوبوں کوعملی جامہ پہنانے کے لئے لائحہ عمل بھی تیار کیا گیا۔


پریس ریلیزکے مطابق میٹنگ میںجماعتی امور،عالمی، ملکی وملی مسائل بھی زیرغور رہے اور ان سے متعلق تجاویز وقرار داد منظور کی گئیںجن میں سپریم کورٹ کے ذریعہ ہم جنسی کو جرم قرار دینے کے فیصلہ کا خیر مقدم ،لوجہاد کی مضحکہ خیز اصطلاح اور اس کے نام پر مسلمانوں کے خلاف شرانگیزی کی مذمت علاوہ ازیں ملک بھر میں تمام دہشت گردانہ واقعات پر اظہار تشویش کیاگیا اور ان میں بلاثبوتپ مسلم نوجوانوں کو پھنسانے کی مذمت کی گئی۔اجلاس میں ملی تنظیموں کے سربراہوں سے باہم بے بنیاد الزام تراشی سے گریز کرنے اورملی اتحاد اور مسلکی رواداری بنائے رکھنے کی اپیل کی گئی نیزسپریم کورٹ کے اس فیصلہ کا خیرمقدم کیاگیا جس میں دارالقضاء ودارالافتاء پر پابندی عائد کرنے کی اپیل کو خارج کرتے ہوئے ان کے غیرقانونی قرار دئے جانے سے گریز کیاگیاہی۔
I اراکین شوریٰ نے اپنے دیگر فیصلوں میں ملک کے اندر ہونے والے فرقہ وارانہ فسادات پر بھی اظہار تشویش کیااور انہیں شرپسندعناصر کی کارستانی قرار دیاجس کے لئے حکومت سے عوام کے جان ومال کے تحفظ کی اپیل کی گئی۔ اجلاس میں یوپی ایس سی کے امتحانات میں عربی وفارسی کودوبارہ شامل کرنے اورساگر یونیورسٹی مدھیہ پردیش میں شعبہ اردو کو بحال کرنے کی بھی حکومت سے اپیل کی گئی ،انسداد فرقہ وارانہ فسادات بل کے پاس کرنے کا مطالبہ کیاگیا ،مظفر نگر ودیگر علاقوں میں فسادات کے باعث بے گھر ہونے والے کنبوں کی بازآبادکاری کے لئے مؤثر اقدامات کی اپیل،دن بدن بڑھتی ہوئی بے روزگاری اورمہنگائی پر روک لگانے کی اپیل کی گئی۔ اجلاس میں کشمیر کے حالیہ بھیانک سیلاب کے متاثرین سے اظہار ہمدردی کیاگیا اور ان کی راحت رسانی کے لئے قوم و ملت سے اپیل کی گئی ۔موقر اراکین شوریٰ نے اس بات کو زور دے کر کہا کہ جماعت و جمعیت سے متعلق کسی بھی مسئلہ کاحل اور قضیہ کا فیصلہ موقر مجالس عاملہ و شوری ہی میں ہوگا۔اجلاس میں مرکزی جمعیت کے خلاف پروپیگنڈہ کرنے والوں اور ذمہ داران جمعیت پر بے جا الزام لگانے والوں کو جمعیت کا باغی قراد دیتے ہوئے اس فتنہ کی سرکوبی کی ہر ممکن سعی پر زور دیاگیاعلاوہ ازیں یہ بھی فیصلہ کیاگیاکہ جب تک نام نہاد جمعیت ڈیزولو نہیں کردی جاتی تب تک ذمہ داران مرکزی جمعیت ان کے ساتھ تصفیہ کی میز پر آنے سے باز رہیں۔
اجلاس میںحالیہ اسرائیلی جارحیت کی مذمت ،شام کی صورت حال پر اظہار تشویش ،داعش کی بہیمانہ کارروائیوں کی مذمت اور اس کے دعوئ خلافت کا ابطال ،سعودی عرب کی دینی وانسانی خدمات کی ستائش اور اس کے خلاف مرقد رسولؐ کی منتقلی کا شوشہ چھوڑکر پروپیگنڈہ کرنے والوں کی بھی مذمت کی گئی۔نام نہاد تنظیم’’القاعدہ‘‘ کے سربراہ ایمن الظواہری کے بیان کو شرانگیزاور اسلام مخالف طاقتوں کا پروپیگنڈہ قرار دیتے ہوئے اس کی مذمت کی گئی

The Collective Fatwa against Daish and those of its ilk

ہمارے رسائل وجرائد

http://ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/al-isteqamah2gk-is-214.jpglink
http://ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/islahe-samaj2gk-is-214.jpglink
http://ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/jareeda-tarjumah2gk-is-214.jpglink
http://ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/the-symple-truth2gk-is-214.jpglink
«
»
Loading…