شہزادہ نایف بن عبدالعزیز آل سعود کومملکت سعودی عرب کا ولی عہدمقررکئے جانے پرمرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے امیرحافظ محمدیحییٰ دہلوی اور ناظم عمومی مولانا اصغرعلی امام مہدی سلفی کی مبارکباد

شہزادہ نایف بن عبدالعزیز آل سعود کومملکت سعودی عرب کا ولی عہدمقررکئے جانے پر
مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے امیرحافظ محمدیحییٰ دہلوی اور ناظم عمومی مولانا اصغرعلی امام مہدی سلفی کی مبارکباد
دہلی:۱۳ نومبر ۱۱۰۲ء مرکزی جمعیت اہل حدیث ہند کے امیرحافظ محمد یحییٰ دہلوی اور ناظم عمومی مولانا اصغرعلی امام مہدی سلفی نے اخبار کے نام جاری ایک بیان میںخادم حرمین شریفین شاہ عبداللہ بن عبدالعزیز آل سعود کے شاہی فرمان کی بیعت کونسل کی توثیق کے بعد شہزادہ نایف بن عبدالعزیز آل سعود کو مملکت سعودی عرب کا نیا ولی عہد مقرر کیے جانے پر شاہ عبداللہ بن عبدالعزیز آل سعود ، شہزادہ نایف بن عبدالعزیز آل سعود اور دیگر اعیان مملکت و سعودی عوام کو دلی مبارک باد پیش کی ہے اور کہا ہے کہ شہزادہ نایف بن عبدالعزیز کے ولی عہد بنائے جانے سے خطے میں استحکام واستقرار اور امن وامان کی صورت حال میں مزید اضافہ ہوگا،ان کی اعلیٰ ملکی وانتظامی صلاحیت اور طویل سیاسی تجربات سے ملک مزید ترقی سے ہمکنار ہوگا اور دینی،ملکی وانسانی کاز کو تقویت ملے گی۔
مولانا نے کہا کہ شہزادہ نایف بن عبدالعزیز ایک مضبوط وبااثر شخصیت کے مالک ہیں ۔ انہوں نے بڑی کامیابی ومستعدی کے ساتھ ملک کے اند ر وباہر دہشت گردی کے قلع قمع کرنے کے حوالے سے صرف جزیرۃ العرب سے ہی نہیں بلکہ ساری دنیا سے خراج تحسین حاصل کیا ہی۔ کیوں کہ دہشت گردی کے خلاف مسلسل کامیاب کوششوں کی وجہ سے ان کی شخصیت اور امن واستقرار ایک دوسرے کے لیے لازم وملزوم ہوگئے ہیں۔ مملکت سعود ی عرب میں امن امان کا تذکرہ کرتے ہی شہزادہ نایف کا تصور ابھر کر سامنے آجاتاہے ۔ یہ ایک ایسی حقیقت ہے جس کا اعتراف سبھی نے کیا ہی۔ 
ناظم عمومی نے کہا کہ شہزاد ہ نایف بن عبدالعزیز جن کی پیدائش طائف کے اندر ۳۳۹۱ء میں ہوئی تھی اور جن کا نمبر شاہ عبدالعزیز کے بیٹوں میں۳۲واں ہے تقریبا ۹۵ سالوں سے سیاسی خدمات انجام دے رہے ہیں ۔ اس دوران وہ حکومت کے مختلف اہم عہدوں پر فائز رہی۔۲۵۹۱ء میں ریاض کے اندرسکریٹری بنی، ۳۵۹۱ء میں ریاض کے گورنر بنی، شاہ فیصل بن عبدالعزیز آل سعود نے ۰۷۹۱ میں انہیں نائب وزیر داخلہ مقرر کیا ، پھر۵۷۹۱ء میں وزیر داخلہ بنائے گئے ،جب کہ مارچ ۹۰۰۲ء میںشہزادہ سلطان بن عبدالعزیز کی علالت کے پیش نظران کو وزیر اعظم کانائب ثانی بھی مقرر کیاگیااوراب ۷۲اکتوبر۱۱۰۲ء کوشاہی فرمان کی بیعت کونسل کی توثیق کے بعد انہیں ولی عہداورنائب وزیراعظم مملکت سعودی عرب متعین کیاگیاہی۔
 علاوہ ازیں امیرنایف متعددعہدوں پر فائز ہیں: ریلیف اور راحت رسانی نیز انسانی خدمات کے جتنے بھی ادارے ہیں وہ ان سب کے نگران اعلیٰ ہیں۔عرب ممالک کے وزراء داخلہ کی کونسل کے اعزازی صدر،کنگ سعودیونیورسٹی ،ریاض کی سوسائٹی برائے سائنس وکمیونیکیشن کے اعزازی صدر،سعودی ایسوسی ایشن برائے میڈیا وکمیونیکیشن کے اعزازی صدر، سپریم حج کمیٹی کے صدر، قومی کمیٹی برائے انسداد منشیات کے چیئرمین ،سپریم کونسل برائے اطلاعات ونشریات کے صدر،اعلیٰ اختیاراتی کمیٹی برائے تحفظ صنعت کے صدر،امیرنائف ایوارڈ برائے حدیث والدراسات الاسلامیہ کے عالمی اعلیٰ بورڈ کے صدر،سپریم کونسل برائے شہری تحفظ کے صدر،مین پاورکونسل کے چیئرمین، بورڈبرائے انسانی ترقی فنڈکے چیئرمین،اعلیٰ کمیٹی برائے نایف بن عبدالعزیزآل سعود ایوارڈ کے چیئرمین ،  اعلیٰ کمیشن برائے سیاحت کے چیرمین  ،سعودی کمیٹی برائے انتفاضہ القدس کے سپر وائزر جنرل اوراسلامی امورکی اعلیٰ کونسل کے رکن ہیں۔  اس کے علاوہ بھی وہ متعددعہدوںپرفائز ہیں۔موصوف خادم حرمین شریفین شاہ عبداللہ بن عبدالعزیز اور اپنے پیش رو شہزادہ سلطان بن عبد العزیز کی عدم موجودگی میں کابینہ کے اجلاس کی صدارت بھی کرچکے ہیں۔ جس سے ان کی حسن تدبیر ،قائدانہ بصیرت اور انتظامی صلاحیتوں کا اندازہ ہوتا ہی۔
ناظم عمومی نے کہا کہ شہزادہ نایف بن عبدالعزیز سعودی عوام اور انسانیت کے بڑے بہی خواہ اور ہمدرد ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ مملکت سعودی عرب ہی نہیں بلکہ دنیا کے کسی بھی خطے میں آفت ناگہانی آتی ہے اور انسانیت اس سے متاثر ہوتی ہے تو ان کا دل تڑپ اٹھتا ہے اور وہ متاثرین کی امداد وخیر خواہی کے لیے آگے آتے ہیں ۔ اللہ تعالیٰ اس اختیار وتعین کوہرطرح سب کے لیے باعث خیروبرکت بنائی۔
٭٭

The Collective Fatwa against Daish and those of its ilk

ہمارے رسائل وجرائد

http://ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/al-isteqamah2gk-is-214.jpglink
http://ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/islahe-samaj2gk-is-214.jpglink
http://ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/jareeda-tarjumah2gk-is-214.jpglink
http://ahlehadees.org/modules/mod_image_show_gk4/cache/the-symple-truth2gk-is-214.jpglink
«
»
Loading…